بھارت پاکستان سمیت تمام پڑوسی ممالک سے دوستانہ تعلقات خا خواہاں : بھارت

سرینگر:کشمیر سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر کاجل بٹ جو اقوام متحدہ میں بھارت کی طرف سے مستقل مشن میں کونسلر، قانونی مشیر نے پاکستان پر جموں کشمیر میں تخریب کاری کو بڑھادینے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان جموں کشمیر میں بھارت کے خلاف درپردہ جنگ جاری رکھے ہوئے ہیں اوراگر پاکستان چاہتا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان بات چیت ہواس کیلئے پاکستان کو”انتہاء پسندی“سے پاک ماحول بنانا ہوگا۔کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ہندوستان نے اقوام متحدہ میں اس کے خلاف جھوٹے اور بدنیتی پر مبنی پروپیگنڈے کیلئے پاکستانی کی سرزنش کی اورکہا کہ دونوں ممالک کے درمیان بات چیت اسی وقت ممکن ہے جب پاکستان انتہا پسندی سے پاک ماحول بنائے۔

اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل مشن میں کونسلر/قانونی مشیر ڈاکٹر کاجل بٹ نے پاکستان پر سختردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان بات چیت ہواس کیلئے پاکستان کو انتہاء پسندی سے پاک ماحول بنانا ہوگا اور ہندوستان اس وقت تک سرحد پارتخریب کاری کا جواب دینے کیلئے ‘مضبوط اور فیصلہ کن اقدامات’ جاری رکھے گا۔

ڈاکٹر بھٹ کا تعلق جموں و کشمیر سے ہے۔ ڈاکٹر بھٹ نے کہا کہ ہندوستان پاکستان کے ساتھ ساتھ اپنے ہمسایہ ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات استوار کرنا چاہتا ہے۔ شملہ معاہدے اور لاہور ڈیکلریشن کے مطابق بقایا مسائل اگرکوئی ہوتو اس کا دوطرفہ اور پرامن طریقے سے حل نکالنے کے لئے پرعزم ہے۔

اقوام متحدہ میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ذریعہ ایک بارپھر ہندوستان کے خلاف اس پلیٹ فارم سے جھوٹا پروپیگنڈا کیا جا رہا ہے۔ پاکستان دنیا کی توجہ اپنی حقیقی صورتحال سے ہٹانا چاہتا ہے جہاں انتہاء پسندی حاوی ہے اور وہاں اقلیتی برادری کے لوگوں کارہنامشکل ہو رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں