لداخ میں ہمارے بہادر فوجیوں کی کارورائی سے چینی فوج واپس جانے پر مجبور ہو گئی

جموں کشمیر میں امن و قانون کی بحالی کیلئے دی گئی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا / راجنا تھ سنگھ

سرینگر:مشرقی لداخ میں حقیقی کنٹرول لائن پر ہند چین کشیدگی کے چلتے مرکزی وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا ہے کہ ہمارے بہاد فوجیوں کی کارورائی سے چینی فوج واپس جانے پر مجبور ہو گئی۔

سی این آئی مانیٹرنگ کے مطابق آیف آئی سی سی کے جنرل اجلا س سے خطاب کرتے ہوئے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا کہ ہمالیہ کے محاذوں پر تعینات ہماری فوج نے یہ ثابت کرکے دیکھا کہ ملک کی سالمیت کو کبھی خطرہ لاحق نہیں ہو سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ لداخ میں چینی فوج کے ساتھ مقابلہ کرتے ہوئے ہمارے فوج نے بہادری کا مظاہرہ کیا اور اس کا نتیجہ یہ ہوا ہے کہ چینی فوج خود ہی واپس جانے پر مجبور ہوئی۔انہوں نے کہا کہ ہمیں ان جوانوں کی بہادری یاد ہے جنہوں نے ملک کی حفاظت کرتے ہوئے اپنی جانیں نچھاور کردیں۔

ملک ہمیشہ ان کا ممنون ر ہے گا۔“راجناتھ سنگھ نے کہا کہ لداخ میں ہی نہیں بلکہ جموں کشمیر میں تعینات ہماری فوج نے عسکریت کا صفایا کیا۔ انہوں نے کہا ہے کہ ہماری فوج نے جس بہادری سے جموں کشمیر میں امن و قانون کی بحالی کیلئے قربانیاں پیش کی ہے وہ ہمیشہ یاد رکھی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کے سب سے بڑے جمہوری ادارے پر حملہ کروانے ملک کو اپنے ارادوں میں ناکامی کے سوا کچھ بھی نہیں ملا۔انہوں نے کہا کہ 370کی منسوخی سے جموں کشمیر کے عوام بہت خوش ہیں جس کے نتیجے میں لوگ تعمیر و ترقی کے پروگراموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔

انہوں کہا کہ جموں کشمیر کی سرحدی ہوں یا لداخ میں چین کے ساتھ لگنے والی سرحدیں بھارت کے سپوتوں نے ہر محاذ پر بہادری دکھاکر دشمنوں کے عزائم کو ناکام بنایا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں