منی پور میں خواتین کے ساتھ وحشیانہ بربریت کا واقعہ قوم کے ضمیر کے لیے بڑا دھبہ ہے: بھگونت مان

چنڈی گڑھ، پنجاب کے وزیر اعلی بھگونت مان نے جمعرات کے روز منی پور میں دو خواتین کے ساتھ ہونے والے جنسی زیادتی اور وحشیانہ بربریت پر گہرے رنج اور افسوس کا اظہار کیا۔

مسٹر بھگونت مان نے منی پور کی حکومت سے بھی اپیل کی ہے کہ اس گھناؤنے جرم کے ملزمین کو مثالی سزا دی جائے۔

ایک بیان میں وزیراعلیٰ نے کہا کہ یہ بدقسمتی ہے کہ بے سہارا خواتین اس گھناؤنے جرم کا شکار ہوئیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ وحشیانہ واقعہ ملک کے ضمیر پر ایک بڑا دھبہ ہے اور اس واقعہ کی سب کو مذمت کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک بزدلانہ اور غیر انسانی فعل ہے جس کی وجہ سے آج ملک کا ہر باشندہ شرمندہ ہے۔

مجرموں کو سخت سے سخت سزا دینے کی وکالت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ ایسے مجرم کسی رعایت کے مستحق نہیں ہیں اور انہیں سخت ترین سزا دے کر ملکی قانون کے مطابق نمٹا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی اور ریاستی حکومت کو اس بات کو یقینی بنانا چاہئے کہ ملزمین کو جلد از جلد سزا دی جائے، تاکہ متاثرہ خواتین کے خاندان، دوستوں اور ان کے خیر خواہوں کو انصاف مل سکے۔ خواتین کی عزت اور وقار کو یقینی بنانے کے اپنے موقف کو دہراتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس مقصد کے لیے کوئی کسر نہیں چھوڑی جانی چاہیے۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ملک کے وزیر اعظم کو اس معاملے میں فوری مداخلت کرنی چاہیے اور مجرموں کو سخت سے سخت سزا دینی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ منی پور میں حالات قابو سے باہر ہوتے جا رہے ہیں اور وزیر اعظم کو اس پر بھی توجہ دینی چاہیے۔

یو این آئی۔ م ش۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں