کم سن لڑکیوں سے چھیڑ خانی کرنے والا ملزم گرفتار

دہرادون، پولیس نے اتراکھنڈ کے دہرادون میں پروٹیکشن آف چلڈرن فرام سیکسوئل آفنس (پی او سی ایس او) ایکٹ کے تحت دو الگ الگ مقدمات میں مطلوب دو ملزمین کو گرفتار کیا ہے۔ اس کے علاوہ اغوا ہونے والی نابالغ لڑکی کو بھی بازیاب کرالیا گیا ہے۔

پولیس کے ایک ترجمان نے ہفتہ کو بتایا کہ رائے پور پولیس اسٹیشن میں 27 مئی کو ایک شخص کو اس کی 13 سالہ نابالغ بیٹی کو نامعلوم شخص کے ذریعہ اغوا کرنے کی شکایت موصول ہوئی تھی۔ اس پر پولیس نے کیس درج کرکے معاملے کی تحقیقات شروع کردی۔ اس دوران معلوم ہوا کہ لڑکی نے اپنے والد کے فون پر انسٹاگرام آئی ڈی بنا رکھی تھی۔ جس پر وہ ریل پیل کرتی تھی اور ایک مشتبہ شخص اس کی ہر پوسٹ پر کمنٹس کرتا تھا۔ اس دوران دونوں کی دوستی ہوگئی۔ تحقیقات کے بعد، مقامی پولیس نے جمعہ کو لاپتہ لڑکی کے ساتھ 22 سال کے ملزم وکاس کشیپ کو اس کے گاؤں دتاولی، گیسو پور، ضلع میرٹھ سے گرفتار کیا۔ بازیاب ہونے والی لڑکی کو طبی معائنے کے بعد اس کے رشتہ داروں کے حوالے کر دیا گیا ہے جبکہ نوجوان کو اغوا اور پوکسو کے جرم میں گرفتار کر کے عدالت میں پیش کیا گیا۔ جہاں سے اسے جیل بھیج دیا گیا ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ دوسرا معاملہ پولیس اسٹیشن پریم نگر سے متعلق ہے، جس میں کانپور، اتر پردیش کی رہنے والی بیوی نے اپنے شوہر، لکشمی پور کے رہنے والے وشوناتھ انکلیو، پولیس اسٹیشن پریم نگر، دہرادون کے ذریعہ مار پیٹ، اپنی نابالغ بیٹی کے ساتھ چھیڑ چھاڑ اور فحش حرکات کی شکایت درج کرائی ہے۔ رپورٹ درج ہونے کے بعد، پوکسو ایکٹ کے مفرور ملزم نوین کمار کے بیٹے مرحوم جگت سنگھ کو آج گرفتار کر لیا گیا۔ یہ بھی عدالت میں پیش کیا جا رہا ہے۔

یو این آئی۔ خ س۔ ع ا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں