فرضی دستاویز کی بنیاد پر نوکری پانے والے دو ملزم گرفتار

بلیا:اترپردیش کے ضلع بلیا میں ڈسٹرکٹ عدالت میں فرضی دستاویزات کی بنیاد پرنوکری حاصل کرنے کے معاملے میں پولیس نے بدھ کو دو ملزمین کو گرفتار کر کے جیل بھیج دیا ہے۔

پولیس ذرائع کے مطابق پڑوسی ضلع مئو کے پپری گاؤں باشندہ دھرمیندر یادو و گورکھپور کے آلوک کے خلاف پولیس نے منگل کو سول عدالت کے چیف ایڈمنسٹریٹیو افسر اشوک کمار اپادھیائے کی تحریر پر بلیا شہر کوتوالی میں منگل کو تعزیرات ہند کی دفعات 419،420،468اور472 کے تحت نامزد مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

ایس پی شنکر آنند نے بتایا کہ چیف ایڈمنسٹریٹو افسر اشوک کمار اپادھیائے نے اپنی تحریر میں ذکر کیا ہے کہ الہ آباد ہائی کورٹ کی طرف سے گذشتہ 16مئی کو ضلع جج، بلیا کو گروپ سی کے عہدے پر 31 ملازمین کی تقرری کر کے اس امید سے بھیجے گئے کہ تقرری اتھارٹی ضلع جج ان کے پہچان و دستاویز کی تصدیق کر کے تقرری نامہ جاری کریں۔ اس میں ضلع مئو کے دوہری گھاٹ تھانہ علاقے کے پپری گاؤں کے دھرمیندر یادو کا بھی نام شامل ہے۔

پہچان و دستاویز تصدیق کے دوران پایا گیا کہ دھرمیندر یادو نے فرضی دستاویزات کی بنیاد پر گروپ شی کی تقرری حاصل کی ہے۔ دھرمیندر یادو کی فوٹو و الہ آباد ہائی کورٹ کے پورٹل پر دستیاب فوٹو میں تفریق پائی گئی۔ دھرمیندر یادو کے ذریعہ مختلف فوٹو گورکھپور کے رہنے والے آلوک کا بتایا گیا ہے۔

چیف ایڈمنسٹریٹو افسر آشوک کمار اپادھیائے نے تحریر کے ساتھ دھرمیندر یادو کو بھی پولیس کے سپرد کردیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس نے ملزم دھرمیندر یادو کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا ہے۔

یواین آئی۔ولی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں