میر واعظ اور دیگر محبوسین کی رہائی کیلئے لیفٹنٹ گورنر کو مکتوب بھیجے کا فیصلہ

مذہبی جماعتوں کے مشترکہ اتحاد ،متحدہ مجلس علماء نے منگل کو کہا ہے کہ وہ نوجوانوں میں خودکشی اور منشیات کے بڑھتے ہوئے واقعات کو روکنے کے لئے ایک مسلسل مہم شروع کریں گے۔ متحدہ مجلس علماء نے مزید کہا کہ وہ جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کو ایک خط لکھیں گے تاکہ چیئرمین میر واعظ عمر فاروق اورجموں کشمیر کی مختلف جیلوں میںمقید دیگر سیاسی لیڈروںکی رہائی عمل میں لائی جائے۔ میٹنگ کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے متحدہ مجلس علماء کے سینئر رکن اور جموں و کشمیر کے مفتی اعظم ناصر الاسلام نے کہا کہ میٹنگ میں متحدہ مجلس علماء کے ارکان نے وادی میں بڑھتی ہوئی خودکشی اور منشیات کے بے دریغ استعمال کے سنگین مسائل کو زیر غور لایا۔ انہوں نے کہا’’ہم نے میدان میں آنے اور دونوں مسائل کو حل کرنے کے لیے ایک سنجیدہ اور مستقل مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ‘‘۔مفتی انصر الاسلام نے کہا کہ خودکشی ایک تشویش ہے اور ایسا نہیں ہونا چاہیے اور اسی طرح منشیات کا استعمال ایک بڑا مسئلہ ہے اور یہ ہماری نوجوان نسل کو ختم کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر کوئی امام یا مولوی نوجوانوں کو گمراہ کرنے یا لڑکیوں میں منشیات کے استعمال اور خودکشی کی طرف دھکیلنے کے لیے خوف کی فضا پیدا کرنے کی کسی قسم کی شرارت میں ملوث پایا گیا تو اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ مفتی نا صر الاسلام نے کہا کہ متحدہ مجلس علماء نے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کی رہائی کا مطالبہ کرنے کا بھی فیصلہ کیا جو 5 اگست 2019 سے گھر میں نظر بند ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ متحدہ مجلس علماء کی جانب سے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کو مکتوب بھی روانہ کریں گے تاہم ذاتی طور پر نہیں ملیں گے۔اجلاس میں قرارداد پاس کی گئی جس میں جامع مسجد ، آثار شریف درگاہ حضرت بل اور دیگر مرکزی مقامات کو نماز جمعہ کیلئے کھولنے کی اپیل کی گئی۔ اجلاس میںمحرم الحرام کی آمد پر ملت کشمیر سے اپیل کی گئی کہ وہ روایتی شیعہ سنی ملی اتحاد کے روشن مشعل کو ماضی کی طرح ہر سطح پر قائم رکھیں اور موجودہ نازک وقت میں اتحاد دشمن افراد اور ایجنسیوں کی ریشہ دوانیوں سے چوکنا رہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں