علامتی تصویر
علامتی تصویر
علامتی تصویر

سرینگر : بانڈی پورہ، اننت ناگ اور راجوری کے پیر پنچا ل سیکٹر میں تین مسلح جھڑ پوں کے دوران دی ریسسٹنس فرنٹ سے وابستہ دو جنگجو مارے گئے جبکہ فو ج ایک جونیئر کمیشنڈ آفیسر (جے سی او) اور چار فوجی جوانوں کے ہلاک ہو ئے ہیں اور ایک پولیس اہلکار زخمی ہوگیا ہے۔

راجوری جھڑ پ میں پھنسے جنگجو ؤں اور فورسز کے مابین خون ریز تصادم جاری ہے۔ ادھر آ ئی جی کشمیر وجے کمار نے کہا کہ بانڈی پورہ جھڑ پ میں ہلاک شدہ جنگجوشاہ گنڈ میں مارے گئے سومو ڈرائیور کے قتل میں ملوث تھا۔ پولیس ذرائع کے مطابق حاجن علاقے کے گنڈ جہانگیر نامی گاؤں میں پیر کی صبح فورسز کو مذکورہ علاقے میں جنگجو ؤں کے چھپے ہونے کی مخفی اطلاعات ملی تھی، جس کے بعد انہوں نے علاقے کا محاصرہ کیا اور تلاشی کارروائی شروع کردی۔

ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ علاقے میں اْس گولیوں کی گن گرج سنائی دی جب وہاں بستی سے دور ایک نرسرہی میں محصور جنگجوؤں اور فورسز کے درمیان جھڑپ شروع ہوئی۔معلوم ہوا ہے کہ جھڑپ کے ساتھ ہی فورسز کی مزید کمک طلب کی گئی جبکہ علاقے کو پوری طرح سیل کر دیا گیا اور جنگجوؤں کے فرار ہونے کے تمام راستے کو سیل کر دیا گیا۔ ذرائع کے مطابق علاقے میں گولیاں کا تبادلہ ایک گھنٹے تک جاری رہا اور فائرنگ کا تبادلہ تھم جانے کے ساتھ ہی جھڑپ کے مقام سے تلاشی کے دوران ایک جنگجو کی لاش بر آمد کر لی گئی اور اس کے قبضے سے ہتھیار بھی بر آمد کر لیا گیا۔

مہلوک عسکریت پسند کی شناخت امتیاز احمد ڈار کے طور پر ہوئی ہے اور پولیس نے اس بات کا بھی دعویٰ کیا ہے کہ مذکورہ جنگجو حال ہی میں شاہ گنڈ میں مارے گئے سومو ڈرائیور کے قتل میں ملوث تھا۔ ڈرائیور کا قتل کرنے کے بعد اس کے چار ساتھیوں کو حراست میں لیا گیا تھا جبکہ اس نے ٹی آ ر ایف لشکر طیبہ میں شمولیت اختیار کی تھی۔ ادھر گزشتہ رات ضلع اننت ناگ کے کھاگنڈ ویری ناگ علاقے میں پیر کی علی الصبح جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان تصادم میں ایک نامعلوم جنگجوپسند ہلاک اور ایک پولیس اہلکار زخمی ہوا۔ایک پولیس افسرنے کہاکہ تلاشی مہم کے دوران علاقے میں چھپے ہوئے جنگجو ؤں نے سلامتی دستوں پر گولی باری شروع کردی جس کے بعد جھڑپ شروع ہوگئی۔

اس میں ایک جنگجو مارا گیا اور ایک پولیس اہلکار زخمی ہوا ہے۔ادھرراجوری میں پیر پنجال رینج سیکٹر میں کارروائی کے دوران ایک جونیئر کمیشنڈ آفیسر (جے سی او) اور چار فوجی جوانوں کے ہلاک ہو ئے ہیں۔موصولہ اطلاع کے مطابق، چارکے قریب جنگجو سرحد پار کرکے پونچھ پہنچے تھے اور اس کے بعد کشمیر وادی کے لئے نکلے تھے۔ مغل روڈ کے پاس ڈیرا کی گلی علاقے میں سیکورٹی اہلکاروں نے چاروں جنگجوؤں گردوں کو گھیر لیا، جس کے بعد دونوں طرف سے گولی باری شروع ہوگئی۔

اس گولی باری میں فوج کا ایک جونیئر کمیشنڈ آفیسر (جے سی او) اور چار فوجی فوجی شدید طور پر زخمی ہوگئے تھے، جس کے بعد انہیں فوراً اسپتال لے جایا گیا، لیکن انہوں نے راستے میں ہی دم توڑ دیا۔ سیکورٹی اہلکاروں نے اس کے ساتھ ہی پورے علاقے کو گھیر لیا ہے اور خبر لکھے جانے تک تصادم جاری ہے۔جموں میں واقع وزارت دفاع کے پی آر او نے اس بات کی تصدیق کی کہ جنگجوؤں کے ساتھ تصادم کے دوران ایک جے سی او اور بھارتی فوج کے چار جوان ہلاک ہوئے ہیں۔پی آر او نے بتایا کہ فوج نے سورن کوٹ پونچھ میں دارا کی گلی کے نزدیک دیہات میں محاصرہ اور سرچ آپریشن کے بعد تصادم شروع کیا تھا۔ یہ آپریشن انٹیلی جنس کی رپورٹ کی بنیاد پر شروع کیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں