عام شہر یوں اور ٹارگٹ کلنگس امن میں خلل ڈالنے اور فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا کر نے کی سازش

ولیس کے ڈائریکٹر جنرل دلباغ سنگھ نے جمعرات کو کہا کہ جموں و کشمیر میں عام شہریوں اور اقلیتی برادری کے افراد کا قتل امن میں خلل ڈالنے اور یو ٹی میں فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا کرنے کا قدم ہے لیکن پولیس اور سیکورٹی فورسز نے ایسے تمام منصوبوں کو ناکام بنا کر جنگجوؤں کے عزائم کو کامیاب نہیں ہونے دیا۔

سی این ایس زیوان میں سرینگر میں پولیس یادگاری دن کے موقعہ پرتقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈی جی پی نے کہا کہ کچھ جنگجو سرحد پار بیٹھے اپنے آ قا ؤں کے مشورے پر عمل کرتے ہوئے شہریوں اور اقلیتی برادری کے افراد کو قتل کرکے امن میں خلل ڈال رہے ہیں ان ٹا رگٹ کلنگس کا مقصد کشمیر میں فرقہ وارانہ فسادات کو ہوا دینا تھا لیکن پولیس اور دیگر فورسز نے جنگجوؤں اور ان کے سرپرستوں کے مقاصد کو ناکام بنانے کے لیے تیزی سے کام کیا۔

انہوں نے کہا کہ شہریوں کا قتل نہ صرف پرامن ماحول میں خلل ڈالنا ہے بلکہ کشمیر کے عام لوگوں کی روزی روٹی اور سیاحت کو بھی متاثر کرنا ہے۔ ڈی جی پی نے کہا کہ ہم نے امن کے دشمنوں کو منہ توڑ جواب دیا ہے اور دیتے رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ اس سال اب تک پورے بھارت میں 370 پولیس اہلکار اور سیکورٹی فورسز کے دیگر اہلکار ڈیوٹی کے دوران مارے گئے۔

ڈی جی پی نے لائن آف ایکشن میں شہید ہونے والے تمام پولیس اہلکاروں کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ پولیس ملک کی سالمیت کے تحفظ اور جموں و کشمیر میں امن کو برقرار رکھنے کے لیے پرعزم ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں