وزیر داخلہ امیت شاہ کے دورے سے پہلے کشمیر میں سیکورٹی سخت کر دی گئی

گویر رسول/ خبر اردو

وزیر داخلہ امت شاہ کے جموں و کشمیر کے دورے سے پہلے سیکورٹی مزید سخت کر دی گئی ہے۔ سیکورٹی کے جائزے کے بعد اضافی فورسز تعینات کی گئی ہیں۔ “نیم فوجی دستوں کی 20-25 اضافی کمپنیاں صرف سرینگر میں تعینات کی گئی ہیں۔” حکام نے بتایا کہ ایک سکیورٹی جائزہ لیا گیا جس کے بعد سری نگر میں مزید فوجیوں کی تعیناتی کا فیصلہ کیا گیا۔

امیت شاہ وادی میں بڑھتی ہوءی کشیدگی، غیر ریاستی باشندوں اور ماینارٹیز پر حملوں کے بعد ایک ہایی لیول سیکیورٹی میٹنگ کا جایزہ لینے کے لے کشمیر کا دورہ کر رہے ہیں۔ ان حملون کے بعد اپوزیشن نے بی جے پی کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور حکومت پر زور دیا کہ فوری طور پر عوام میں سینس آف سیکیورٹی قایم کرنے کے لے اقدامات اٹھاے۔ پچھلے پندرہ دنوں میں گیارہ عام شہری مارے گے جن میں زیادہ تر غیر ریاستی اور ماینارٹی کے لوگ شامل تھے۔

وزیر داخلہ امت شاہ 23 سے 25 اکتوبر تک جموں و کشمیر کا دورہ کریں گے۔واضح رہے کہ 5 اگست 2019 کے بعد وادی کا یہ ان کا پہلا دورہ ہوگا ، جب انہوں نے جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت ، اس کی ریاست کا درجہ ختم کرنے اور لداخ کو علیحدہ مرکزی علاقہ بنانے کے لیے پارلیمنٹ میں بل پیش کیے۔

اسی دوران شہر سرینگر میں سیکیورٹی کے چلتے کءی انتظامات کءے گءے ہیں۔ ٹریفک پولیس کی ایڈوایزری کے مطابق اس دوران گپکاراور بولیوارڈ روڈ کونشاط تک عام ٹریفک کے لءے بند کر دیا گیا ہے۔ اس دوران لوگ فورشور روڈ حبک حضرتبل سڑک کا استِمال کر سکتے ہیں۔ شہرکے کءے علاقوں میں انٹرنیٹ کو فال وقت منسوخ کیا گیا ہے،۔۔۔کءی مقامات پر ناکے قایم کر کے لوگوں اور گاڑیوں کی تلاشی لی جا رہی ہے۔ جگہ جگہ موبایل بنکرس بھی نصب کے گے ہیں اور موٹر سایکل اور سکوٹرس کو
روک کر پولیس سٹیشنز میں جمع کیا جا رہا ہے۔

تاہم آءی جی پی کشمیر نے وضاحت کرتے ہوے کہا کہ موٹر سایکل اور سکوٹرس کا ضبط کرنا اور عارضی طور پر موبایل انٹرنیٹ کا کچھ علاقوں میں معطل کرنا صرف اینٹی ملیٹینسی آپریشن سے منسلک اقدام ہیں اور اس کا وزیر داخلہ کے دورے سے کویی تعلق نہیں ہے۔

لال چوک اور آس پاس کے علاقوں پر ڈرونز کے ذریعہ خاص نظر رکھی جا رہی ہے۔ اور اسی طرح ان علاقوں جہاں اقلیتی فرقے کے لوگ رہتے ہیں ان پر بھی ڈرونز کے ذریعہ نظر رکھی جاَے گی۔

امیت شاہ 23 تاریخ کو وادی میں یونیفائیڈ کمانڈ کے اجلاس کی صدارت کرنے والے ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ وہ وادی میں قیام کے دوران مختلف صنعتوں کے اداروں کے نمائندوں سے ملاقات کر نے کے علاوہ سرینگر میٹرو ریل لاین اور پلوامہ میں ایمس اسپتال کا سنگ بنیاد بھی رکھیں گے۔ وزیر داخلہ 23 ویں شام کو سری نگر-شارجہ براہ راست پرواز کو ہری جھنڈی بھِی دکھائیں گے۔

چوبیس تاریخ کوامیت شاہ جموں میں ایک عوامی ریلی سے خطاب کریں گے۔ یہاں پر دلچسپ بات یہ ہے کہ ۵ اگست دو ہزار انیس کے فیصلے کے بعد جموں میں بی جے پی کی یہ پہلی عوامی ریلی ہوگی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں