سرجیکل اسٹرائیکس نے ہندوستانی فوج کے عزم اور صلاحیت کو ظاہر کیا: وزیر اعظم

سرینگر: وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعرات کو کہا کہ 2016میں لائن آف کنٹرول کے پار سرجیکل اسٹرائیکس نے ہندوستانی فوج کے عزم اور صلاحیت کو ظاہر کیا اور کہا کہ وہ خود اس آپریشن کی نگرانی کرتے رہے جب تک کہ آخری سپاہی بحفاظت واپس نہ آجائے۔جموں و کے نوشہرہ سیکٹر میں فوجیوں کے ساتھ دیوالی منائی اور کہایہاں بطور وزیر اعظم نہیں، خاندان کے ایک فرد کے طور پرآیا ہوں۔

کشمیر نیوز سروس (کے این ایس) کے مطابق راجوری کے نوشہرہ سیکٹر میں فوجیوں سے خطاب کرتے ہوئے، جہاں انہوں نے لائن آف کنٹرول کے قریب فوجی جوانوں کے ساتھ دیوالی منائی، پی ایم مودی نے کہا کہ میں آپریشن کی خود نگرانی کر رہے تھے جب فوج نے 2016میں سرحد پار سے سرجیکل اسٹرائیک کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ فوج قوم کی “سرخشا کاوچ” (آرمر) ہے اور یہ ان کی وجہ سے ہے؛ ملک کے لوگ سکون سے سو سکتے ہیں اور تہواروں میں خوشی ہوتی ہے۔مودی نے کہا کہ پانچ سال پہلے سرجیکل اسٹرائیک کے بعد دہشت گردی پھیلانے کی کوششیں کی گئی تھیں لیکن انہیں منہ توڑ جواب دیا گیا۔

“سرجیکل اسٹرائیک میں آپ کا تعاون آنے والے وقتوں میں یاد رکھا جائے گا۔ میں کال کا بے چینی سے انتظار کر رہا تھا، نہیں چاہتا تھا کہ کوئی پیچھے رہ جائے۔ لیکن آپ فاتح بن کر سامنے آئے۔ اسٹرائیک کے بعد بھی کوششیں کی گئیں۔ یہاں کے امن کو خراب کرنا،” انہوں نے کہا۔انہوں نے مزیدکہا کہ بھارت کو بدلتی ہوئی دنیا اور جنگ کے طریقوں کے مطابق اپنی فوجی صلاحیتوں میں اضافہ کرنا چاہیے۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ یہ دوسرا موقع ہے جب پی ایم مودی نے ضلع میں فوج کے جوانوں کے ساتھ دیوالی منائی۔

2019میں، پی ایم مودی نے راجوری میں آرمی ڈویڑن میں دیوالی منائی، اور اس بار انہوں نے نوشہرہ میں فوجیوں کے ساتھ تہوار منایا، جو ایل او سی کے قریب ہے۔فوجیوں سے اپنے خطاب کے دوران، انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ ان کے ساتھ ایک خاندان کے رکن کے طور پر ہیں، نہ کہ ملک کے وزیر اعظم کے طور پر اور کہا کہ وہ اپنے ساتھ کروڑوں ہندوستانیوں کا آشیرواد لے کر آئے ہیں۔

پی ایم مودی نے فوجیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا، “میں یہاں آپ کے وزیر اعظم کے طور پر نہیں، بلکہ ایک خاندان کے فرد کے طور پر آیا ہوں۔ میں کروڑوں ہندوستانیوں کا آشیرواد لے کر آیا ہوں۔”انہوں نے کہا کہ جس لمحے وہ یہاں اترے، ان کا دل سنسنی سے بھر گیا۔ یہ جگہ جہاں میں موجود ہوں تمہاری بہادری کی مثال ہے۔ آپ نے یہاں تمام سازشوں کا منہ توڑ جواب دیا ہے،“ پی ایم مودی نے کہا۔وزیر اعظم کے دورے سے قبل فوجی سربراہ این این نروانے بدھ کو ہی راجوری پہنچ گئے اور اگلے علاقوں کا دورہ کیا اور موجودہ سیکورٹی صورتحال کا جائزہ لیا۔

قبل ازیں سرکاری ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی جمعرات کی صبح جموں ہوائی اڈے پر اترنے کے بعد سیدھے راجوری کے نوشہرہ سیکٹر کی طرف روانہ ہوئے۔بتا دیں کہ سال2019میں بھی وزیر اعظم نے راجوری میں ہی سرحد پر فوجی جوانوں کے ساتھ دیوالی کا تہوار منایا تھا۔ادھر وزیر اعظم نریندر مودی اس وقت راجوری میں فوج کے ساتھ دیوالی کا تہوار منایا جب پونچھ کے نار خاص جنگلوں میں گذشتہ قریب ایک ماہ سے سیکورٹی فورسز اور جنگجوؤں کے درمیان تصادم جاری ہے جس میں اب تک دو جے سی اوز سمیت نو فوجی جوان جان بحق ہوئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں