بالائی علاقوں میں تازہ برفباری کے بعد وادی میں شبانہ درجہ حرارت میں کافی گراوٹ درج

تاریخی مغل روڈاور بانڈی پورہ گریز شاہراہ تازہ برفباری کے بعد ٹریفک کی نقل وحرکت کیلئے بند

موسم سرما کے دستک دینے کے فوراً بعداور وادی کے بالائی علاقوں میں تازہ برفباری ہونے کی وجہ سے وادی کشمیر میں شبانہ درجہ حرارت میں کافی گراوٹ درج کی جارہی ہے جس کی وجہ سے لوگوں نے گرم ملبوسات کے ساتھ ساتھ روم ہیٹر اور کانگڑیوں کا استعمال کرنا لازمی قرار دیا ہے۔

بالائی علاقوں میں ہوئی تازہ برفباری کے نتیجے میں روزانہ کے درجہ حرارت میں بھی کافی گراوٹ محسوس کی جارہی ہے جس کی وجہ سے سردی کی شدت میں اضافہ ہورہاہے جس کے چلتے سرینگر میں کل رات کے 5.6ڈگری درجہ حرارت کے مقابلے میں جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب کو درجہ حرارت 1.8سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔وادی میں مطلع ابر آلود رہنے اور بالائی علاقوں میں تازہ برفباری ہونے کی وجہ سے شبانہ درجہ حرارت میں کافی گراوٹ آئی ہے۔

ایس این ایس کو محکمہ موسمیات ذرائع سے ملی تفصیلات کے مطابق بانڈی پورہ۔گریز شاہراہ پر تقریباًساڑھے 7سینٹی میٹر برف ریکارڈ کی گئی جس کی وجہ سے سڑک کو ٹریفک کی نقل وحمل کیلئے فی الحال بند کردیا گیا ہے۔یاد رہے کہ گریزبانڈی پورہ سڑک اکتوبر کے مہینے میں ہوئی پہلی برفباری کے بعد سے آج تک تیسری بار ٹریفک کی نقل وحمل کیلئے بند کردی گئی ہے۔گریز میں حکام نے تازہ برفباری کے بعد گریز

بانڈی پورہ شاہراہ کو جزوی طور پر ٹریفک کی نقل وحرکت کیلئے بند کردیا ہے۔ایس این ایس کے مطابق رازدان چوٹی پر برفباری کی وجہ سے پیدا پھسلن کو دیکھتے ہوئے شاہراہ کو بند کرنا پڑا۔ایس ڈی ایم گریز نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ گریز۔بانڈی پورہ شاہراہ کو ٹریف کی نقل وحمل کیلئے فی الحال عارضی طور پر بند کردیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ تیسری بار ہے کہ جب اکتوبر مہینے سے ہوئیبرفباری کے بعد گریز۔

بانڈی پورہ سڑک کو بند کردیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ سڑک کی معطلی عارضی ہے اور موسم کی حالت بہتر رہنے کی صورت میں اسے دوبارہ بحال کردیا جائے گا۔دریں اثناء جموں صوبے کے پونچھ ضلع کو جنوبی کشمیر کے شوپیاں سے جوڑنے والے تاریخی مغل روڈ کو راجوری اور پونچھ اضلاع کے بالائی علاقوں میں تازہ برف باری کی وجہ سے ہر قسم کی گاڑیوں کی آمدورفت کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔

ڈپٹی ایس پی ٹریفک، راجوری پونچھ، آفتاب شاہ نے ایس این ایس کو تفصیلات دیتے ہوئے بتایا کہ خاص طور پر پیر کی گلی کے قریب برف باری ہونے اور پھسلن کی وجہ سے سڑک پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل ہوگئی ہے۔شاہ نے مزید کہا کہ سڑک پر ٹریفک کی بحالی موسمی حالات پر منحصر ہے۔اس بیچ گلمرگ کے بالائی علاقوں کے علاوہ کپواڑہ،مڑھل،زیڈ گلی اورٹنگڈار سے بھی تازہ برفباری کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

دریں اثناء جمعہ کو وادی کے کئی مقامات پر کم سے کم درجہ حرارت میں اضافہ ہواہے۔موسمیات محکمہ کے ذرائع سے حوالے سے ایس این ایس کو ملی تفصیلات کے مطابق سرینگر میں گزشتہ رات کے 5.6ڈگری سیلشیس درجہ حرارت کے مقابلے میں کل رات کا کم سے کم درجہ حرارت 1.8ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔ذرائع کے مطابق گیٹ وے ٹاون قاضی گنڈ میں گزشتہ رات کے 3.2ڈگری درجہ حرارت کے مقابلے میں کل رات کا کم سے کم درجہ صفر اعشاریہ6ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔

جنوبی کشمیر کے مشہور سیاحتی مقام پہلگام میں گزشتہ رات کے 2.2ڈگری درجہ حرارت کے مقابلے کل رات کا کم سے کم درجہ حرارت منفی 2.8ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔کوکرناگ میں گزشتہ رات کے 3.1ڈگری درجہ حرارت کے مقابلے میں کل رات کا کم سے کم درجہ حرارت ایک اعشاریہ 7ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔ادھر شمالی کشمیر کے کپواڑہ قصبے میں گزشتہ رات کے 6.7ڈگری درجہ حرارت کے مقابلے میں کل رات کا کم سے کم درجہ حرارت صفر اعشاریہ 7ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔

ایس این ایس کے مطابق وادی کے مشہور سکینگ ریزورٹ گلمرگ میں گزشتہ رات کے ایک ڈگری درجہ حرارت کے مقابلے میں کل رات کا کم سے کم درجہ حرارت منفی 2.5ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔ادھر لیہہ میں گزشتہ رات کے 7.6ڈگری درجہ حرارت کے مقابلے میں کل رات کا کم سے کم درجہ حرارت منفی3.2ڈگری ریکارڈ کیا گیا۔

اس دوران محکمہ موسمیات نے ابھی کسی طرح کی بھاری برفباری یا موسلا دھار بارشوں کی کوئی پیشگوئی نہیں کی ہے۔البتہ جموں وکشمیر میں اگلے 24گھنٹوں کے دوران کہیں کہیں پر ہلکی بارش اور گرج چمک کے ساتھ تیز بارش یا برفباری کی پیشگوئی کی گئی ہے۔دریں اثنا ء محکمہ موسمیات نے اگلے ایک ہفتے تک کیلئے موسم عام طور پر خشک رہنے کی بھی پیش گوئی کی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں