سرد ترین موسم اور کرونا ضوابط کے بیچ 10جماعت کے سالانہ ریگولر امتحانات شروع

سر ینگر:سرد ترین موسم اور کرونا ضوابط کے بیچ ہفتہ کو وادی میں 10ویں جماعت کے سالانہ ریگولر امتحانات شروع ہوئے۔جس دوران امتحانی مراکز میں سرد موسم کے بیچ طلاب کی بھیڑ جمع ہوئی اور وہ امتحانی مراکز میں داخل ہونے میں سبقت لے جاتے ہوئے دیکھے گئے۔ بیشتر طالبات اپنے والدین کے ہمراہ امتحانی مراکز میں پہنچ گئیں۔

امتحانی مراکز کے باہر سخت ترین سیکورٹی انتظامات عمل میں لائے گئے تھے،جبکہ مراکز کے اندر بھی کرونا وائرس سے بچنے سے متعلق معیاری عملیاتی طریقہ کار کو عملایا گیا تھا۔ مراکز میں ہاتھ دھونے کیلئے صابن اور سینی ٹائزروں کو دستیاب رکھا گیا تھا۔امتحانی مراکز کے ہالوں میں بھی امتحان کے دوران طلاب میں جسمانی دوری کے احتیاتی تدابیر کو عملایا گیا تھا۔

دسویں جماعت کے امتحانات میں 80ہزار طلاب نے رجسٹر یشن کرائی ہے،جن کیلئے سرکاری وغیر سرکاری اسکولوں میں 791امتحانی مراکز کو قائم کیا گیا ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ امتحان میں کم و بیش تمام طلاب حاضر رہیں اور انہوں نے کرونا ضوابط و معیاری عملیاتی طریقہ کار کو عملایا۔

امتحان کے دوران نگران عملے نے طلاب کو امتحان میں دی گئی اس رعایت کہ انہیں سونمبرات میں سے صرف 70نمبرات کے سوالات ہی حل کرنے ہیں،کے بارے میں بھی معلومات فراہم کیں۔تین گھنٹےکے سو لنامے کے بجائے صرف ڈھائی گھنٹے کا وقت دیا گیا۔اس دوران جموں کشمیر بورڑ آف اسکول ایجوکیشن کے افسران نے کئی امتحانی مراکز کا دورہ کیا۔بورڈ حکام نے مراکز کا معائنہ کرنے کے دوران امتحانات کے نگرانی عملے اور اسکول منتظمین پر زور دیا کہ وہ امتحانات میں شرکت کرنے والے طلاب کو کرونا وائرس جیسے وباء کو مد نظر رکھتے ہوئے ہر ممکن سہولیت فراہم کریں۔اسکولوں کے سربراہاں کو ہدایت دی گئی تھی کہ وہ امتحانی ہالوں کو گرم اور روشن رکھنے کے انتظامات کو یقینی بنائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں