نوجوانوں میں نااُمیدی اور مایوسی ختم کرنا وقت کی اہم ضرورت: سلمان علی ساگر

سر ینگر: یوتھ نیشنل کانفرنس صوبہ کشمیر کا ایک غیر معمولی اجلاس آج پارٹی ہیڈکوارٹر پر صوبائی یوتھ صدر سلمان علی ساگر کی صدارت میں منعقد ہوا۔ اجلاس کے صدربہ کشمیر کے یوتھ ونگ کے مرکزی عہدیداران اور بلاک صدور صاحبان موجود تھے۔ جنہوں نے اپنے اپنے علاقوں میں نوجوانوں کو درپیش مسائل و مشکلات خصوصاً بے روزگاری، بلاجواز تنگ طلبی اور منشیات کے استعمال میں بڑھتے ہوئے رجحان جیسے معاملات اُجاگر کئے۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سلمان علی ساگر نے کہا کہ گذشتہ برسوں کے دوران کشمیری نوجوان ہر طرح سے متاثر ہوا ہے اور یہاں کی نئی پود مکمل طور پر پشت بہ دیوارہو کر رہ گئی ہے۔ موجودہ حالات نے نوجوانوں میں مایوسی کے بھنور میں ڈال دیا ہے اور ایسی صورتحال میں نوجوان منشیات جیسے غلط کاموں کی طرف راغب ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نوجوانوں میں اُمید کی کرن پیدا کرنا اور ان میں مایوسی اور نااُمیدی کو ختم کرنا ایک بہت بڑا چیلنج ہے اور اس کیلئے ایک بڑے اور وسیع منصوبے کی ضرورت ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ نوجوانوں کے اعتماد کو بحال کرنے کیلئے حکومتی سطح پر بہت زیادہ کام کرنے کی ضرورت ہے لیکن افسوس کی بات ہے کہ حکمران اس جانب کوئی بھی توجہ دینے کی زہمت گوارا نہیں کررہے ہیں۔ اجلاس میں حیدرپورہ انکاؤنٹر میں مارے گئے معصوم شہریوں کے حق میں کلمات اور دعائے مغفرت بھی ادا کیا گیا اور اللہ تعالیٰ سے دعا کی گئی کہ مرحومین کے لواحقین خصوصاً والدین اور بچوں کو صبر جمیل عطا کرے۔

اجلاس میں نائب صدر صوبہ یوتھ یونس مبارک گل، عرفان زہگیر، عابدوانی، شیخ اویس،مشتاق میر، حنان حسن قاضی، عمران پنڈت، صوبائی عہدیداران، زونل صدور اور ضلع صدور صاحبان بھی موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں