چیف آف ڈفنس اسٹاف جنرل راوت اور ان کے کنبے کو لے جا رہا ہیلی کاپٹر گرکر تباہ
چیف آف ڈفنس اسٹاف جنرل راوت اور ان کے کنبے کو لے جا رہا ہیلی کاپٹر گرکر تباہ
چیف آف ڈفنس اسٹاف جنرل راوت اور ان کے کنبے کو لے جا رہا ہیلی کاپٹر گرکر تباہ

چیف آف ڈفنس اسٹاف جنرل راوت اور ان کے کنبے کو لے جا رہا ہیلی کاپٹر گرکر تباہ

سرینگر:سی ڈی ایس جنرل بپن راوت اور ان کے کنبہ کے دیگر افراد خانہ کو لے جانے والے ہیلی کاپٹر کو حادثہ پیش آیا ہے جس کے نتیجے میں ہیلی کاپٹر میں سوار 14میں سے 10افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ادھر واقعہ کے بعد مرکزی وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا کہ صورتحال پر کڑی نگاہ ہے جس کے بعد وزیر اعظم مودی کی سربراہی میں ہنگامی میٹنگ منعقد ہوئی۔

سی این آئی کے مطابق فضائیہ نے حادثے کی تصدیق کر دی ہے۔ فضائیہ نے کہا ہے کہ حادثے کی وجہ جاننے کے لیے تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے۔ہندوستانی فضائیہ کا ایک ایم آئی۔17 وی 5 ہیلی کاپٹر آج تمل ناڈو میں کنور کے نزدیک حادثے کا شکار ہو گیا۔ اس ہیلی کاپٹر میں دفاعی سربراہ (سی ڈی ایس) بپن راوت، ان کا عملہ اور خاندان کے کچھ افراد سوار تھے۔ فضائیہ نے حادثے کی تصدیق کر دی ہے۔

فضائیہ نے کہا ہے کہ حادثے کی وجہ جاننے کے لیے تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے۔دریں اثنا، چنئی میں دفاعی ذرائع نے بتایا کہ اس حادثے میں چار اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں اور تین دیگر کو تشویشناک حالت میں اسپتال میں داخل کرایا گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ ہیلی کاپٹر میں 14 افراد سوار تھے۔ باقی سات افراد کے بارے میں ابھی تک اطلاعات دستیاب نہیں ہیں۔ غیر مصدقہ ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ جنرل راوت کی اہلیہ مدھولیکا راوت بھی ہیلی کاپٹر میں سوار تھیں۔

حادثہ کے فوری بعد راحت اور بچاو کا عمل شروع کر دیا گیا۔واقعہ پر کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے ٹوئٹ کر کے کہا کہ امید ہے کہ ہیلی کاپٹر پر سوار سی ڈی ایس جنرل بپن راوت، ان کی اہلیہ اور دیگر لوگ سلامت ہوں گے۔

زخمیوں کی جلد صحتیابی کے لئے دعا کرتا ہوں۔اطلاعات کے مطابق دفاعی سربراہ بپن راوت اپنی الیہ کے ساتھ ویلنگٹن میں ایک تقریب میں شرکت کے لئے گئے تھے۔ ویلنگٹن آرمڈ فورسز کا کالج ہے اور یہاں بپن راوت کو ایک لیکچر دینا تھا۔ وہ سولور سے کنور جا رہے تھے۔ یہاں سے انہیں دہلی روانہ ہونا تھا لیکن گھنے جنگل کے سبب یہ حادثہ ہو گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں