سری نگر کے حدود میں تیز دھار والے ہتھیاروں کی خرید و فروخت پر پابندی عائد : ڈی سی سری نگر

سری نگر، تیز دھار والے ہتھیاروں سے حملوں کے کئی واقعات پیش آنے کے بعد ضلع انتظامیہ سری نگر نے عوامی مقامات پر تیز دھار والے ہتھیاروں کی خرید وفروخت پر پابندی عائد کردی ہے۔

ضلعی انتظامیہ نے تیز دھار ہتھیار رکھنے والے افراد کو متنبہ کیا ہے کہ وہ 72 گھنٹوں کے اندر اندر ان کو نزدیکی پولیس تھانوں میں سرینڈر کریں بصورت دیگر قانونی کارروائی کے لئے تیار ہیں۔

بتادیں کہ حالیہ ایام کے دوران سری نگر کے قمر واری ، بمنہ ، کرالہ پورہ ، بٹہ مالو ، نوہٹہ ، کوٹھی باغ اور رام باغ علاقوں میں چھرا زنی کے واقعات پیش آئے ۔

ضلع ترقیاتی کمشنر اعجاز اسد کی جانب سے جاری کئے گئے حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ شہر سری نگر میں عوامی مقامات پر تیز دھار والے ہتھیاروں کی خرید و فروخت پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

حکم نامہ کے مطابق عوام کی حفاظت اور عوامی مقامات پر تیز دھار والے ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق واقعات شہریوں کی زندگیوں کے لئے خطرہ ہے جبکہ سری نگر کے حدود میں لوگوں کی طرف سے تیز دھار ہتھیار لیجانے کے عمل کو روکنا اب ناگزیر بن گیا ہے تاکہ اس طرح کے واقعات کو روکا جا سکے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ گھریلو، زرعی، سائنسی، صنعتی مقاصد کے علاوہ کسی اور مقصد کے لئے تیز دھار والے ہتھیاروں کا بلیڈ نو انچ سے زیادہ لمبا ہو یا جس کا بلیڈ دو انچ سے زیادہ چوڑا ہو وہ آرمز ایکٹ 195کے تحت قابل سزا جرم ہے۔

حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ سی آر پی سی کی دفعہ 144کے تحت حاصل اختیار کی بنیاد پر ضلع سری نگر کے حدود میں عوامی مقامات پر تیز دھار ہتھیاروں کی خرید و فروخت یا لانے لیجانے پر فوری طورپر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

انہوں نے کہاکہ عوامی مقامات ، پارکوں، تفریحی مقامات ، بازاروِ اسکولوں ، مذہبی مقامات اور سرکاری عمارتوں کے اردگرد بھی تیز دھار والے ہتھیاروں پر پابندی عائد رہے گی۔

ضلعی انتظامیہ نے تیز دھار ہتھیار رکھنے والے افراد کو متنبہ کیا ہے کہ وہ 72گھنٹوں کے اندر اندر ان کو نزدیکی پولیس تھانوں میں سرینڈر کریں بصورت دیگر قانونی کارروائی کے لئے تیار ہیں۔

یو این آئی، ارشید بٹ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں