امید ہے کہ انتظامیہ امسال 8 اور 10 محرم کے جلوسوں پر پابندی ہٹائے گی: انجمن شرعی شیعاں جموں وکشمیر

سری نگر، انجمن شرعی شعیان جموں وکشمیر کے نمائندے آغا سید مجتبیٰ موسوی نے لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ کی طرف سے امسال سری نگر میں 8 اور 10 محرم کے جلوسوں پر پابندی ہٹانے کی امید ظاہر کی ہے۔

انہوں نے پیر کو یہاں سکریٹرٹ میں لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کے ساتھ منعقدہ میٹنگ کے بعد نامہ نگاروں کو بتایا: ‘ہمیں لیفٹیننٹ گورنر صاحب نے یقین دلایا کہ اس سلسلے میں اُن کی طرف سے مثبت رسپانس رہے گا’۔

ان کا کہنا تھا: ‘سری نگر میں 8 اور 10 محرم کے جلوسوں پر پابندی ہٹانے سے متعلق مفصل میٹنگ ہوئی جس میں ایل جی صاحب نے وشواس دلایا کہ ہماری طرف سے مثبت رسپانس رہے گا اور ہم جلد ہی سیکورٹی ایجنسیوں کے ساتھ مل کر حتمی فیصلہ لیں گے’۔

موصوف نمائندے نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ انتظامیہ امسال روایت سے ہٹ کر فیصلہ لے گی اور ان محرم جلوسوں پر پابندی ہٹا کر شیعہ برادری کے دیرینہ مطالبے کو پورا کرے گی۔

انہوں نے کہا: ‘جیسا کہ یہ خود دعویٰ کرتے ہیں کہ یہاں سیکورٹی صورتحال بہتر ہوئی ہے اور جی ٹونٹی اجلاس بھی منعقد ہوا اور شری امرناتھ جی یاترا بھی اچھی طرح سے چل رہی ہے لہذا ہمیں بھی امید ہے کہ اس مسئلے کو بھی حل کیا جائے گا’۔

ان کا کہنا تھا کہ تاہم اس سلسلے میں ابھی کوئی حتمی فیصہ نہیں لیا گیا۔

بتادیں کہ سری نگر میں 8 اور 10 محرم کے جلوسوں پر گذشتہ 33 برسوں سے پابندی عائد ہے۔

یو این آئی- ایم افضل

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں