پاکستان گئے مقامی ملی ٹینٹوں کی جائیدادیں منسلک کی جارہی ہیں ،ایل او سی پر پولیس اہلکار وں کو بھی تعینات کرنے کا فیصلہ لیا گیا : پولیس سربراہ

جموں، جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ کا کہنا ہے کہ یونین ٹریٹری کے مختلف حصوں سے جو ملی ٹینٹ پناہ لینے کے لئے پاکستان چلے گئے ہیں ان کی جائیداد کو منسلک کیا جارہا ہے اور یہ سلسلہ جاری رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس جموں و کشمیر سے تعلق رکھنے والے ملی ٹینٹوں کی ایک فہرست ہے جو پاکستان چلے گئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ان ملی ٹینٹوں پر کڑی نظر رکھی جا رہی ہیں کیونکہ یہ لوگ سرحد پار بیٹھ کر دہشت گردی کو فروغ دے رہے ہیں۔ان باتوں کا اظہار پولیس چیف نے راجوری میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس کے دوران کیا۔

انہوں نے کہاکہ جموں وکشمیر کے مختلف حصوں سے جو ملی ٹینٹ پاکستان چلے گئے ہیں ان کی جائیداد کو منسلک کیا جارہا ہے۔پولیس سربراہ نے کہاکہ ہمارے پاس دہشت گردوں کی ایک فہرست ہے جو جموں وکشمیر کے پشتینی باشندے ہیں اور پناہ لینے کی خاطر پاکستان فرار ہوگئے۔ مذکورہ دہشت گرد وں پر کڑی نظر رکھی جارہی ہے کیونکہ وہ پاکستانی زیر قبضہ کشمیر میں بیٹھ کر دہشت گردی کو فروغ دے رہے ہیں۔

دلباغ سنگھ نے کہاکہ سرگرم جنگجووں پر کوئی رحم نہیں کیا جائے گا اور وہ واپس آنے کی کوشش کریں تو انہیں مار گرایا جائے گا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستانی زیر قبضہ کشمیر میں مقیم دہشت گرد جموں وکشمیر میں ملی ٹینسی کو پھر سے فروغ دینے کی کوششوں میں مصروف ہے۔پولیس چیف نے ایک سوال کے جواب میں کہا:’ راجوری اور پونچھ رینج میں 9سے 12دہشت گرد سرگرم ہیں جن میں سے زیادہ تر غیر ملکی ہیں اور ان میں سے تین جنگجووں کو تصادم آرائیوں کے دوران ہلاک کیا گیا‘۔

انہوں نے کہاکہ باقی ملی ٹینٹوں کا سراغ لگانے کی خاطر پونچھ اور راجوری اضلاع میں یومیہ ملی ٹینٹ مخالف آپریشنز لانچ کئے جاتے ہیں اور ہمیں پورا یقین ہے کہ انہیں بھی بہت جلد کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔

انہوں نے بتایا کہ ریاسی میں جاری تصادم میں ایک ملی ٹینٹ مارا گیا جبکہ اس کے ساتھی کی تلاش تیسرے روز بھی جاری ہے۔راجوری اور پونچھ اضلاع میں سرگرم ملی ٹینٹوں کے خلاف کامیاب آپریشنز کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں پولیس سربراہ نے کہاکہ سیکورٹی فورسزکے اہلکار دن رات کام کر رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ دہشت گردوں کا سراغ لگانے کی خاطر مختلف علاقوں میں آپریشنز جاری ہے۔

ان کے مطابق سرحد کے اس پار سے راجوری اور پونچھ اضلاع میں دہشت گردی کو پھر سے بڑھاوا دینے کی کوششیں کی جارہی ہیں لیکن ان کے منصوبوں کو ناکام بنایا جائے گا۔ولیج ڈیفنس کمیٹیوں(وی ڈی سی) کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے کہاکہ وی ڈی سی ممبران دہشت گردی کا خاتمہ کرنے کی خاطر کلیدی کردا ر ادا کر رہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ ولیج ڈیفنس کمیٹیوں کو مزید فعال کرنے کی خاطر اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔دراندازی کے بارے میں پولیس سربراہ نے کہاکہ ایل او سی پر امسال جتنی بھی کوششیں کی گئیں انہیں ناکام بنایا گیا۔ ۔

انہوں نے بتایا کہ حالیہ سیکورٹی جائزہ میٹنگوں کے دوران فیصلہ لیا گیا ہے کہ اب کنٹرول لائن پر فوج کے ساتھ جموں وکشمیر پولیس کے اہلکار بھی تعینات رہیں گے تاکہ سرحد پر سیکورٹی گرڈ مزید مضبوط ہو سکے۔

منشیات کے کاروبارکو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کا ارادہ ظاہر کرتے ہوئے پولیس سربراہ نے کہاکہ اس پار سے منشیات کی کھیپ اس طرف بھیجنے کا سلسلہ جاری ہے تاہم ڈرون کے ذریعے کی جانے والی کوششوں کو ناکام بنا دیا گیا۔انہوں نے کہاکہ سرحد کے نزدیک رہائش پذیر چند افراد جو منشیات کو اس طرف لانے کی سازش کا حصہ ہے ان کی شناخت کی جارہی ہیں اور بہت جلد انہیں سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا جائے گا۔

یو این آئی- ارشید بٹ-ایم افضل

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں