کشمیر: ماہ ستمبر میں گرمی کا 130سالہ پرانا ریکارڈ ٹوٹ گیا، درجہ حرارت 34.2ریکارڈ

سری نگر،وادی کشمیر میں ماہ ستمبر میں گرمی کا زور جاری رہتے ہوئے منگل کے روز 130 سالہ پرانا ریکارڈ ٹوٹ گیا جب درجہ حرارت 34.2 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔

ماہر موسمیات فیضان کینگ نے یو این آئی اردو کو بتایا کہ وادی کشمیر میں ماہ ستمبر میں گرمی کا 130سالہ پرانا ریکارڈ منگل کے روز ٹوٹ گیا ہے ۔

انہوں نے بتایا کہ 12ستمبر کو سری نگر میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 34.2ڈگری سینٹی گریڈ درج کیا گیا جو معمول سے 6ڈگری زیادہ ہے۔

انہوں نے مزید کہاکہ یکم ستمبر 1970میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 33.8ڈگری اور 18ستمبر 1934میں 35ڈگری سینٹ گریڈ درجہ ہوا تھا۔ماہر موسمیات نے کہاکہ قاضی گنڈ میں 12ستمبر کو زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 33.2ڈگری سینٹی گریڈ درج کیا گیا جو کہ معمول سے 6.7ڈگری زیادہ ہے۔انہوں نے بتایا کہ قاضی گن میں 1956کے بعد ستمبر کے مہینے میں پارہ 32ڈگری کے پار چلا گیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ کپواڑہ میں منگل کو زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 33.8، بارہ مولہ میں 32.2، بانڈی پورہ میں 33.2، بڈگام میں 33.2، پلوامہ میں 31.8، شوپیاں میں 33.8، کولگام میں 31.1، اننت ناگ میں 32.8اور سونہ مرگ میں 27.5ڈگری سینٹی گریڈ درج کیا گیا ہے۔

دریں اثنا محکمہ موسمیات کے ڈپٹی ڈائریکٹر مختار احمد نے بتایا کہ وادی میں 15 ستمبر تک گرمی کی شدت جاری رہنے کا امکان ہے۔انہوں نے کہا کہ فی الوقت موسم جوں کا توں رہنے کی توقع ہے۔ان کا کہنا تھا کہ 15 ستمبر کے بعد وادی میں موسم میں تبدیلی متوقع ہے جس دوران 17 اور 18 ستمبر کو ہلکی بارشوں کا بھی امکان ہے۔

موصوف نے کہا کہ اس دوران موسم ابر آلود رہ سکتا ہے جس سے درجہ حرارت میں کمی واقع ہوسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ تاہم 20 ستمبر تک موسم میں وسیع پیمانے پر تبدیلی ہونے کا کوئی امکان نہیں ہے۔

یو این آئی- ارشید بٹ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں