شمالی کمان کے کے سربراہ کا ایل او سی دورہ، فوج کی تیاریوں کا جائزہ لیا

جموں، فوج کی شمالی کمان کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل اوپندر دویدی نے جمعے کے روز لائن آف کنٹرول کا دورہ کیا۔معلوم ہوا ہے کہ فوجی کمانڈر نے راجوری میں اگلی چوکیوں کا دورہ کیا او روہاں پر فوج کی آپریشنل تیاریوں کا بچشم جائزہ لیا۔بتادیں کہ بفلیاز حملے کے بعد راجوری اور پونچھ اضلاع میں سیکورٹی فورسز کی تعیناتی بڑھائی گئی ہے۔

دفاعی ترجمان نے بتایا کہ شمالی کمان کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل اوپندر دویدی نے جمعے کے روزراجوری کے سرحدی علاقوں کا دورہ کیا۔

سرحد پر تعینات اہلکاروں سے بات چیت کے دوران شمالی کمان کے کمانڈر نے کہاکہ سخت ترین موسمی صورتحال اور دیگر چیلنجوں کے باوجود فوجی جوان اپنی خدمات خوش اسلوبی کے ساتھ انجام دے رہے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ فوج کی کوششوں کے نتیجے میں ہی لائن آف کنٹرول پر اس وقت امن و امان قائم ہے۔

فوجی کمانڈر نے سرحد پر تعینات جوانوں کو بتایا کہ امن دشن عناصر کے منصوبوں کو ناکام بنانے کی خاطر ایل او سی پر مزید چوکسی برتنے کی ضرورت ہے۔اس سے قبل لیفٹیننٹ جنرل اوپندر دویدی کو فوج کے سینئر آفیسران نے سرحدوں کی صورتحال کے بارے میں بریفنگ دی۔

فوجی کمانڈر کو اس موقع پر پونچھ اور راجوری کے جنگلی علاقوں میں سرگر ملی ٹینٹوں کے خلاف چلائے جارہے آپریشنز کے بارے میں جانکاری فراہم کرتے ہوئے بتایا گیا کہ فوج کسی بھی چیلنج کا مقابلہ کرنے کے لئے پوری طرح سے تیار ہیں۔واضح رہے کہ جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی سربراہی میں جمعرات کو جموں میں ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ منعقد ہوئی جس میں فوج اور پولیس کے سینئر آفیسران نے شرکت کی۔

میٹنگ کے دوران ایل جی منوج سنہا نے فوجی کمانڈروں کو ہدایت دی کہ پونچھ اور راجوری میں سرگرم ملی ٹینٹوں کے خلاف چلائے جارہے آپریشنز کو مزید تیز تر کیا جائے تاکہ امن دشمن عناصر کے منصوبوں کو ناکام بنایا جاسکے۔ذرائع نے بتایا کہ راجوری اور پونچھ اضلاع میں سرگرم ملی ٹینٹوں کو مار گرانے کی خاطر نئی حکمت عملی ترتیب دی گئی ہے ۔

یو این آئی، ارشید بٹ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں