اسٹیٹ بنک کو گروی رکھنے پر عمران خان کی نکتہ چینی

اسلام آباد، (یو این آئی): پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے قرض کی ادائیگی کے لیے اسٹیٹ بینک آف پاکستان کو بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے پاس گروی رکھنے پر وزیر اعظم عمران خان کی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق، پیر کے روز صوبہ خیبر پختونخواہ کے ڈیرہ اسماعیل خان میں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے، مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ قرض کے معاہدے کے بعد اسٹیٹ بینک اب پاکستان کے تئیں جوابدہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ بینک نے سال 2019 سے اب تک وفاقی حکومت کو ایک روپیہ بھی نہیں دیا۔
حکومت کی ناقص معاشی پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے مولان فضل الرحمان نے کہا کہ ان لوگوں پر زیادہ سے زیادہ ٹیکس لگائے جا رہے ہیں جو پہلے ہی خوراک، ادویات اور دیگر بنیادی سہولیات کے خرچ کا بندوبست کرنے کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عام آدمی کے لیے بجلی بھی سستی نہیں ہوئی۔

انہوں نے کہا، “حکومت عالمی ایجنڈے کو پورا کر رہی ہے لیکن ہم اسے غلام قوم میں تبدیل نہیں ہونے دیں گے۔”

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں