انسداد دہشت گردی عدالت نے خدیجہ شاہ کو جرم ثابت نہ ہونے پر رہا کر دیا

کوئٹہ، انسداد دہشت گردی عدالت نے خدیجہ شاہ کو جرم ثابت نہ ہونے پر رہا کر دیا۔
تفصیلات کے مطابق 14 روزہ ریمانڈ پورا ہونے پر آج کوئٹہ میں اے ٹی سی میں پی ٹی آئی کارکن خدیجہ شاہ کو پیش کیا گیا، خدیجہ شاہ کو دو ہفتے قبل لاہور سے راہداری ریمانڈ پر کوئٹہ منتقل کیا گیا تھا۔

انسداد دہشت گردی عدالت کے جج سعادت اللہ بازئی نے کیس کی سماعت کی جب کہ خدیجہ شاہ کی پیروی سید اقبال شاہ ایڈووکیٹ نے کی، عدالت نے جرم ثابت نہ ہونے پر سیکشن 169 کے تحت دائر کیس خارج کرنے کا حکم دے دیا، اور خدیجہ شاہ کی رہائی کا حکم جاری کر دیا۔

واضح رہے کہ خدیجہ شاہ 9 مئی کے واقعات سے متعلق کیس میں کوئٹہ پولیس کی تحویل میں تھیں۔

ادھر آج 9 مئی کے 12 مقدمات میں گرفتار شاہ محمود قریشی کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیج دیا گیا ہے، ڈیوٹی مجسٹریٹ نے پولیس کی جانب سے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کر دی تھی، دوران سماعت سابق وزیر خارجہ کمرہ عدالت میں آب دیدہ ہو گئے، کہا مجھے رات ٹھنڈے کمرے میں رکھا گیا، سونے نہیں دیا گیا، ذہنی اور جسمانی طور پر تنگ کیا جا رہا ہے۔

دوسری طرف اسلام آباد ہائیکورٹ نے ٹرائل کورٹ میں جاری سائفر کیس کی کارروائی روکنے کا حکم دے دیا ہے، اور بانی پی ٹی آئی کی درخواست پر 11 جنوری تک حکم امتناع جاری کر دیا۔

یو این آئی۔ ع ا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں