روس سے ناٹو کو کوئی خطرہ نہیں: پنٹاگن

واشنگٹن، (یو این آئی): امریکی محکمہ دفاع کے ہیڈکوارٹر پینٹاگن نے کہا ہے کہ ناٹو کے مشرقی حصے کو روس سے کوئی خطرہ نہیں ہے۔

ایک پریس بریفنگ میں پیر کے روز پینٹاگن کے پریس سکریٹری جان کربی نے کہاکہ ’’ناٹو کے مشرقی حصے کو براہِ راست روس سے کوئی خاص خطرہ نہیں ہے۔ تاہم، ہم جو کچھ دیکھ سکتے ہیں، وہ یہ ہے کہ روسی صدر ولادیمیر پوتن نے جنوبی علاقے اور کریمیا کے ساتھ بیلاروس سمیت یوکرین کی سرحدوں پر بڑی تعداد میں فوجی دستوں کو متحرک کیا ہے۔”

یوکرین اور بیلاروس کی سرحدوں پر روسی فوجیوں کے جمع ہونے پر بات کرتے ہوئے مسٹر کربی نے کہا کہ روس نے تعینات فوجیوں کی تعداد میں مزید اضافہ کیا ہے۔

مسٹر کربی نے کہاکہ ” صلاحیت تعداد سے زیادہ اہمیت رکھتی ہے اور ہم دیکھ سکتے ہیں کہ وہ اپنی صلاحیتوں کو بڑھا رہا ہے۔ یعنی سرحد پر نظر آنے والی صرف فوج یا ان کی گاڑیاں ہی اہم نہیں ہیں بلکہ توپ خانے، طویل فاصلے تک مار کرنے والے مارٹر، فضائی اور سطح پر مارکرنے والے میزائل کے ساتھ ہی خصوصی آپریشن بھی اپنی اہمیت رکھتے ہیں”۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں