ناسا نامعلوم غیر معمولی مظاہرپرامریکی تحقیق کی قیادت کرے گا

لاس اینجلس، امریکی خلائی ایجنسی ناسا نے اعلان کیا ہے کہ اس نے نامعلوم غیرمعمولی مظاہر (یو اے پی) کے مطالعے کے لیے ایک ڈائریکٹر مقرر کیا ہے۔

ناسا نے کل ایک بیان جاری کرتے ہوئے بتایا کہ یواے پی تحقیق کے لئے ناسا کے ڈائریکٹرکے طورپرمارک میکنرنی کومقرر کیا گیا ہے۔ وہ مستقبل کے یواے پیز کی تشخیص کے لیے ایک مضبوط ڈیٹا بیس قائم کرنے کے لیے مواصلات، وسائل اور ڈیٹا تجزیاتی صلاحیتوں کوسنٹرلائزکریں گے۔

ناسا کے مطابق وہ یواے پی پر وسیع تر حکومتی اقدامات کی حمایت کرنے اور ان کو بڑھانے کے لیے مصنوعی ذہانت، مشین لرننگ اور خلا پر مبنی مشاہداتی آلات میں ناسا کی مہارت کا بھی فائدہ اٹھائیں گے۔

یہ اقدام یواے پی کو سمجھنے میں زیادہ نمایاں کردار ادا کرنے کے لئے ناسا کے لیے ایک آزاد مطالعاتی ٹیم کی سفارش پر کیا گیا ہے۔ ٹیم یواے پی کے مطالعہ کے ممکنہ طریقوں سے متعلق معاملات پر مختلف شعبوں میں کمیونٹی کے 16 ماہرین کی مشیرہے۔

ناسانے اس بات کو بہتر طور پر سمجھنے کے لیے آزاد مطالعہ شروع کیا کہ ایجنسی آسمان میں رونما ہونے والے ایسے مظاہرجنہیں سائنسی طور پر غبارے، ہوائی جہاز، یا معروف قدرتی مظاہر کے طور پر شناخت نہیں کیا جا سکتا ہے، کے مزید مشاہدات کے لئے جاری حکومتی کوششوں میں کیسے حصہ ڈال سکتی ہے۔

ناسا نے یواے پی پر آزاد مطالعاتی ٹیم کی ایک رپورٹ جاری کی، جس میں اس کے نتائج اور سفارشات شامل ہیں۔ اس کا مقصد ناسا کو مطلع کرنا ہے کہ جمع کرنے کے لئے کون سا ممکنہ ڈیٹا دستیاب ہے اور ایجنسی مستقبل کے یواے پی کی اصل اور نوعیت پر روشنی ڈالنے میں کس طرح مدد کر سکتی ہے۔

یواین آئی/ژنہوا۔الف الف

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں