غزہ میں بڑھتے ہوئے انسانی المیہ پرمیکرون نےنیتن یاہو سے تبادلہ خیال کیا

پیرس، فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون نے اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو سے فون پر بات چیت کے دوران غزہ میں بڑھتے ہوئے انسانی المیہ پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

میکروں کے دفتر کے مطابق انہیں نے نیتن یاہو سے پائیدار سیز فائر کا مطالبہ کیا ہے۔
العربیہ کے مطابق دوسری جانب اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے فرانس کے صدر کا شکریہ ادا کیا ہے کہ ان کے زیر قیادت فرانس نے بحیرہ احمر میں جہازوں کو درپیش حوثی خطرے سے نمٹنے کے لیے نئے اتحاد میں شمولیت قبول کر لی ہے۔

فرانسیسی صدر کے دفتر کے مطابق صدر کے ایک ہفتہ قبل کیے گئے اعلان کے مطابق فرانس آنے والے دنوں میں اردن کے ساتھ مل کر غزہ میں طبی سہولیات کے لیے کام کرے گا۔

واضح رہے میکرون نیتن یاہو اور اسرائیل کے شروع سے ہی ایک گرم جوش اتحادی ہیں۔ غزہ میں تقریباً تین ماہ کو چھو رہی جنگ میں بھی میکرون نے شروع سے ہی اسرائیل کے ساتھ کھڑے ہونے کا اعلان کیا تھا۔ ابھی پچھلے ہفتے بھی اس جنگ کے دوران اسرائیل آئے تھے۔ یہ ان کا اڑھائی ماہ کے دوران اسرائیل کا تیسرا دورہ تھا۔

البتہ اب انہوں نے غزہ میں شہری ہلاکتوں کے اکیس ہزار کی تعداد کے تجاوز کے بعد عام شہریوں کی شہادتوں کے بارے میں اسرائیلی قیادت کو اپنی تشویش سے آگاہ کیا تھا۔ نیز مغربی کنارے میں یہودی آباد کاروں کی فلسطینیوں کے خلاف پر تشدد کارروائیوں کو بھی روکنے کے لیے کہا تھا۔

اب نئے منظر نامے میں فرانس بحیرہ احمر میں حوثی حملوں کے خلاف اسرائیل اور اس کے دوسرے اتحادیوں کے ساتھ مل کر کھڑے ہونے کے علاوہ فرانس نے لبنانی سرحد کے ساتھ بھی اسرائیلی سیکیورٹی کے لیے خدمات انجام دینے کا وعدہ کیا ہے، جس پر نیتن یاہو نے میکرون کا شکریہ ادا کیا ہے۔

یواین آئی۔ م س

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں