نیتن یاہو نے امریکہ کی فلسیطنی ریاست کی پیشکس یکسر مسترد کردی

تل ابیب، اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو نے امریکہ کی فلسطینی ریاست کی پیشکش یکسر مسترد کر دی۔

ایک پریس کانفرنس کے دوران غزہ میں حماس کے ہاتھوں شکست سے دوچار اسرائیلی وزیراعظم نے کہا کہ انہوں نے امریکہ کو واضح طور پر بتا دیا ہے کہ اسرائیل غزہ کے تنازع کے اختتام پر فلسطینی ریاست کے قیام کی مخالفت کرتا ہے۔

نیتن یاہو نے پریس کانفرنس کے دوران ایک بار پھر اس بات پر زور دیا کہ غزہ میں جنگ اسرائیل کی فتح، حماس کے خاتمے اور یرغمالیوں کی واپسی تک جاری رہے گی، اس میں مہینوں لگ سکتے ہیں۔

صیہونی وزیراعظم کا کہنا تھا اسرائیل کو دریائے اردن کی تمام مغربی پٹی (وہ علاقہ جو مستقبل میں کسی بھی فلسطینی ریاست کے قیام میں شامل ہو سکتا ہے) کا مکمل سکیورٹی کنٹرول اپنے پاس رکھنا ہے۔

نیتن یاہو کا کہنا تھا یہ ضروری شرائط ہیں جو کسی بھی فلسطینی ریاست کے قیام کے منصوبے کی مخالفت کرتی ہیں اور میں نے امریکی دوستوں کو یہ واضح کر دیا ہے کہ میں اسرائیل کی سلامتی کو خطرہ پہنچانے والی کسی بھی کوشش کی مخالفت کروں گا۔

خیال رہے کہ 7 اکتوبر سے جاری اسرائیلی بربریت میں اب تک 25 ہزار سے زائد فلسطینی شہید اور 64 ہزار سے زائد زخمی ہو چکے ہیں۔

اسرائیلی بمباری کے باعث غزہ کی 85 فیصد آبادی بے گھر ہو چکی ہے اور صیہونی حملوں میں شہید ہونے والوں کی بڑی تعداد خواتین اور بچوں کی ہے۔

یو این آئی۔ ع ا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں